پاکستان کی فضائی تاریخ کی سب سے بڑی چوری

فوٹو فائل

دبئی سے پاکستان لایا جانے والا دو کروڑ روہے مالیت کا سونا دوران پرواز چوری ہوگیا، پرواز اترنے پر تلاشی کے باوجود سیکیورٹی حکام سونا برآمد نہ کرسکے۔

پاکستان کی فضائی تاریخ کی سب سے بڑی چوری کا واقعہ سامنے آگیا، دوران پرواز جیولر کا دو کروڑ روپے مالیت کا 1542 گرام سونا چوری ہوگیا۔

نجی ایئرلائن کی پرواز نمبر ای زید 335 سے کراچی آنے والے مسافر جیولر محمد مونس نجی ایئرلائن کی پرواز سے چار ستمبر کی سہ پہر کراچی آرہا تھا۔

متاثرہ جیولر محمد مونس نے گفتگو میں واقعے کی تفصیل کچھ اس طرح بتائی کہ دورانِ پرواز سیٹ کے اوپر لگیج میں رکھے بیگ سے ڈیڑھ کلو سونا غائب ہوا۔

محمد یونس نے کہا کہ سونے کی گمشدگی کی اطلاع فوری طور پر طیارے کے عملے کو دی، جس پر عملے نے سیکیورٹی حکام کو مطلع کیا اور جہاز لینڈ کرنے کے بعد سونے کی تلاش میں پاکستان ایئرپورٹ سیکیورٹی فورس نے مسافروں کی سو فیصد اسکیننگ کی تاہم سونا برآمد نہ ہوسکا۔

ذرائع کے مطابق مسافر محمد مونس قانونی طریقے سے ایکسپورٹ کیے گئے زیورات کی نصف قیمت سونے کی شکل میں واپس لارہا تھا اور سونے کی پاکستان آمد کے بارے میں کسٹم حکام کو پیشگی اطلاع دی گئی تھی، سونا کراچی کے نو رتن جیولرز کی ملکیت تھا۔

ڈیوٹی پر تعینات کسٹم حکام نے بتایا کہ مسافر کی رپورٹ پر جہاز کی تفصیلی تلاشئ لی گئی اور تمام مسافروں اور سامان کی بھی 100 فیصد سکریننگ کی گئی تاہم سونا کسی مسافر سے برآمد نہ ہوسکا کسٹم حکام نے امکان ظاہر کیا کہ چوری کا واقعہ دبئی ایئرپورٹ سے روانگی کے وقت پیش آیا ہو تاہم متاثرہ مسافر کا دعوٰی ہے کہ دوران پرواز سونے کی موجودگی کی تصدیق کی تھی سونا دوران پرواز ہی چوری ہوا ہے۔Letter