پاکستان میں سیلاب کے بعد گریٹا تھنبرگ نے ماحولیاتی تبدیلیوں پرعالمی برادری کو خبردار کر دیا

ان بارشوں اور سیلاب نے ایک بہت بڑے انسانی المیے کو بھی جنم دیا ہے اور اب پاکستان کیلئے ان متاثرین کی بحالی بھی ایک بہت بڑا معاشی چیلینج ہے: گریٹا تھنبرگ

ان بارشوں اور سیلاب نے ایک بہت بڑے انسانی المیے کو بھی جنم دیا ہے اور اب پاکستان کیلئے ان متاثرین کی بحالی بھی ایک بہت بڑا معاشی چیلینج ہے: گریٹا تھنبرگ

سوئیڈن کی 19 سالہ ماحولیاتی کارکن گریٹا تھنبرگ نے عالمی برادری کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں رکارڈ مون سون بارشیں اور سیلاب ایک مثال ہیں، اب بھی وقت ہے عالمی ماحولیاتی تبدیلوں کے خلاف عمل کرنے کا۔

گریٹا تھنبرگ کا کہنا تھا کہ ہم ماحولیات پر صرف تب بات کرتے ہیں جب ہم اس کیلئے وقت نکال سکیں، لیکن ہمیں لگتا ہے کہ یہ محظ ایک مسئلا ہے اور اس میں ایسی کوئی اہم بات اور ہنگامی حالت نہیں ہے جس سے دوسرے معاملات متاثر ہوتے ہوں۔

انہوں نے کہا کہ اب بھی وقت ہے کہ ہم مل کر دنیا کو درپیش اس چیلینج سے نبرد آزما ہوں، اس مسئلی کی سنگینی کو دیکھنا چاہتے ہیں تو پاکستان میں آنے والے سیلاب کو دیکھ لیں یہ آپ کیلئے ایک واضح مثال ہے۔

انہوں نے کہا کہ آپ پاکستان کو دیکھ لیں جہاں رکارڈ مون بارشوں  اور سیلاب نے تباہی مچا دی ہے، خطرناک سیلاب سے 33 ملین سے زائد افراد متاثر ہوئے ہیں،  ساڑھے 4 سو زائد بچوں سمیت 12 سو سے زائد افراد زندگی کی بازی ہار گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ بات یہیں ختم نہیں ہوتی بلکہ ان بارشوں اور سیلاب نے ایک بہت بڑے انسانی المیے کو بھی جنم دیا ہے اور اب پاکستان کیلئے ان متاثرین کی بحالی بھی ایک بہت بڑا معاشی چیلینج ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ہم دوسری چیزوں پر اپنی توجہ مرکوز کیے ہوئے ہیں اور ہم نے اس اہم اور بنیادی مسئلے کو بلکل نظرانداز کر دیا ہے، اب سیاستدانوں کو آگے آکر اس ماحولیاتی تبدیلی کے مسئلے سے نمٹنے کیلئے کچھ کرنا چاہئے۔