شہباز گل کی گفتگو خان صاحب کے فلسفہ شر ہی کا ثمر تھی: پرویز رشید

وہ فوج کے سربراہ کو عوام سے لڑا کر کس کے مقاصد پورا کرنا چاہتے ہیں؟ — فوٹو: فائل

وہ فوج کے سربراہ کو عوام سے لڑا کر کس کے مقاصد پورا کرنا چاہتے ہیں؟ — فوٹو: فائل

مسلم لیگ ن کے رہنما پرویز رشید نے کہا ہے کہ  آج کی تقریر نے یہ بھی ثابت کر دیا ہے کہ شہباز گِل کی گفتگو خان صاحب کے فلسفۂ شر ہی کا ثمر تھی۔

فیصل آباد جلسے میں عمران خان کی تقریر کے رد عمل میں ان کا کہنا تھا کہ خان صاحب کی آج کی تقریر نے واضح کر دیا ہے کہ ان کی راتوں کی نیندیں کیوں اڑی ہوئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انہیں آئین میں درج چیف کے فرائض سے بھی آگہی نہیں، انہیں نیب کے سربراہ اور فوج کے سربراہ کا فرق بھی معلوم نہیں، وہ فوج کے سربراہ کو عوام سے لڑا کر کس کے مقاصد پورا کرنا چاہتے ہیں؟

پرویز رشید نے کہا کہ کچھ دن پہلے عمران کو شکایت تھی کہ سلامتی کے ادارے اُن کی سیاسی مدد سے کیوں گریزاں ہیں اور آج وہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ سلامتی کے اداروں کے سربراہ ان کے سیاسی مخالفین کو کچلنے والے ہونے چاہئیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آئین کے منافی ایسی سوچ رکھنے والا آمریت و فسطائیت کا لاڈلا تو ہو سکتا ہے قائد اعظم کا پیرو کار نہیں۔