شہباز اور نواز شریف کیخلاف توہین عدالت کی درخواست سماعت کے لیے مقرر

عدالت نواز شریف کی واپسی کے لیے احکامات بھی جاری کرے، درخواست (فوٹو فائل)

 وزیراعظم شہباز شریف اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں توہین عدالت کی درخواست کو سماعت کے لیے مقرر کردیا گیا۔

وکیل سید ظفر علی شاہ نے بطور پٹشنر دائر کی گئی درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ نواز شریف بیماری کی غرض سے لاہور ہائی کورٹ  کی اجازت سے بیرون ملک گئے تھے اور انہیں بھیجنے کے لیے شہباز شریف نے بیان حلفی جمع کرایا  تھا۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ نواز شریف مختلف عدالتوں سے اشتہاری ہیں، لہٰذا وزیراعظم شہباز شریف اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی شروع کی جائے۔ علاوہ ازیں عدالت نواز شریف کی واپسی کے لیے احکامات بھی جاری کرے۔ درخواست میں وزیر اعظم شہباز شریف، نواز شریف، وزارت داخلہ اور وزارت خارجہ کو فریق بنایا گیا ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف درخواست رجسٹرار آفس کے اعتراضات کے ساتھ پیر کے روز کے لیے مقرر کرلی گئی ہے، جس کی سماعت چیف جسٹس اطہر من اللہ کریں گے۔ قبل ازیں رجسٹرار آفس نے اعتراض عائد کیا تھا کہ بیان حلفی لاہور ہائی کورٹ میں جمع کرایا، درخواست کے لیے وہی فورم بنتا ہے۔