فٹبال کے حجم کی نئی جیلی فش دریافت

یہ مچھلی پاپوا نیو گنی میں دریافت ہوئی / اسکرین شاٹ
یہ مچھلی پاپوا نیو گنی میں دریافت ہوئی / اسکرین شاٹ

پاپوا نیو گنی میں ایسی جیلی فش دریافت کی گئی ہے جو دیکھنے میں بہت غیرمعمولی ہے۔

ایک غوطہ خور نے اس جیلی فش کی ویڈیو ریکارڈ کی  اور سائنسدانوں نے اس حوالے سے دلچسپی ظاہر کی ہے۔

ڈورین بورچرڈز نے اس ویڈیو کو بنایا اور ان کا کہنا تھا کہ اسکوبا ڈائیونگ کے دوران انہوں نے 3 یا 4 جیلی فش کو دیکھا جو بہت غیرمعمولی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ ‘ ان مچھلیوں کا دماغ نہیں تھا تو میں نہیں جانتا کہ وہ کس طرح پانی میں تیر رہی ہیں’۔

اس سوال کا جواب جاننے کے لیے انہوں نے ویڈیو کو جنوبی افریقہ میں موجود اپنی اہلیہ کو بھیجا۔

ان کی اہلیہ نے اس ویڈیو کو جیلی فش ایپ میں اپ لوڈ کیا جو کہ آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والی ماہر ڈاکٹر لیزا این گریشون کا پراجیکٹ ہے۔

ڈاکٹر لیزا نے بتایا کہ ‘جب میں نے اس ویڈیو کو دیکھا تو میں کرسی سے گرتے گرتے بچی’۔

پہلے انہیں لگا کہ یہ ایک پراسرار جیلی فش Chirodectes maculatus ہے جسے دہائیوں قبل دریافت کیا گیا تھا مگر پھر وہ کبھی دوبارہ نظر نہیں آئی، مگر اب ان کا ماننا ہے کہ یہ ایک نئی قسم ہے۔

دوسری جانب سے ایک اور بحری حیات کی ماہر پروفیسر کائیلی پٹ نے کہا کہ ہوسکتا ہے کہ یہ جیلی فش کی ایک نئی قسم ہو مگر صرف ایک ویڈیو کی بنیاد پر حتمی طور پر کچھ کہنا ممکن نہیں۔

اس جیلی فش کا حجم ایک فٹبال کے برابر ہے اور اس کی ویڈیو دسمبر 2021 میں بنائی گئی تھی مگر اب جاکر اس کے حوالے سے محققین کی رائے سامنے آئی۔