میانمار کی سابق سربراہ آنگ سان سوچی کو ایک اور سزا سنادی گئی

میانمار کی سابق سربراہ آنگ سان سوچی کو ایک اور مقدمے میں تین سال قید بامشقت کی سزا سنا دی گئی. — فوٹو: فائل

میانمار کی سابق سربراہ آنگ سان سوچی کو ایک اور مقدمے میں تین سال قید بامشقت کی سزا سنا دی گئی. — فوٹو: فائل

میانمار کی سابق سربراہ آنگ سان سوچی کو ایک اور مقدمے میں تین سال قید بامشقت کی سزا سنا دی گئی۔

واضح رہے کہ نوبل انعام یافتہ اور بین الاقوامی سطح پر میانمار کی پہچان بننے والی آنگ سان سوچی گزشتہ سال  ملک میں مارشل لا کے نفاذ کے بعد سے ہی زیر حراست ہیں۔ 

 ان پر نومبر 2020 کے عام انتخابات میں سازباز کا الزام تھا، آنگ سان سوچی کو اس سے پہلے بھی دیگر مقدمات میں 17 سال قید کی سزا سنائی جاچکی ہے۔

 اس کے علاوہ ملک کی فوجی عدالت نے میانمار میں برطانیہ کی سابق سفیر وکی بومین اور اُن کے شوہر کو امیگریشن قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر ایک سال قید کی سزا سنادی

برطانوی دفترخارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ معاملہ حل ہونے تک وکی بومین اور انکے خاندان کی حمایت جاری رکھیں گے۔