طالبان نے امریکیوں کے انخلا کے دن پر جشن یوم آزادی منایا؛ عام تعطیل

افغانستان سے امریکی اور نیٹو فوجوں کا انخلا گزشتہ برس 31 اگست کو مکمل ہوا تھا، فوٹو: رائٹرز

طالبان نے افغان سرزمین سے غیر ملکی فوجیوں کے انخلا کے ایک سال مکمل ہونے پر ملک بھر عام تعطیل کا اعلان کیا ہے جب کہ دارالحکومت کو رنگ برنگی روشنیوں سے سجایا گیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق طالبان حکومت نے آج افغان سرزمین سے امریکی فوجیوں کے انخلا کا پہلا سال مکمل ہونے پر جشنِ یومِ آزادی منایا۔ اس موقع پر ملک بھر میں عام تعطیل ہے اور کابل کو رنگ برنگی قمقموں سے سجایا اور آتش بازی بھی کی گئی۔

افغانستان میں طبان حکومت کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ٹویٹ کیا کہ ’’یوم آزادی مبارک‘‘ ۔۔ یہ دن امریکی قبضے سے ملک کی آزادی کا دن ہے جس کے لیے کئی برسوں جنگ کی، مجاہدین شہید ہوئے، زخمی ہوئے۔ ہزاروں بچے یتیم اور خواتین بیوہ ہوئیں۔

طالبان حکومت کے حکام دن کے آغاز سے ہی بگرام ایئر بیس جمع ہوگئے اور سرکاری سطح پر یوم آزادی منایا، امارت اسلامی افغانستان کا پرچم لہرایا اور شدید ہوائی فائرنگ کی گئی۔ یہ وہی فضائی اڈہ ہے جسے امریکی افواج نے طالبان پر بمباری کے لیے استعمال کیا تھا۔

سڑکوں پر گشت کرتے طالبان اہلکار بھی کافی خوش نظر آرہے تھے۔ عالمی میڈیا سے گفتگو میں ایک اہلکار کا کہنا تھاکہ ہم خوش ہیں ملک سے کفار کا قبضہ ختم ہوا اور اسلامی امارت قائم ہوئی۔

افغانستان سے غیر ملکی فوجیوں کے انخلا کو ایک سال مکمل ہوگیا جس کے بعد امن و امان کی صورت حال کافی حد تک بہتر ہے تاہم خواتین کی ملازمتوں اور لڑکیوں کے سیکنڈری اسکول میں واپسی تاحال ممکن نہیں ہوسکی ہے۔

واضح رہے کہ طالبان نے افغانستان میں گزشتہ برس 15 اگست کو اپنی حکومت قائم کرلی تھی تاہم ملک سے امریکی اور نیٹو فوجی کا اںخلا 31 اگست کو مکمل ہوا تھا اور آخری اہلکار کے طیارے پر بیٹھتے ہی طالبان سجدہ شکر میں گر گئے تھے۔