شوہر کی مچھلیاں پکڑنے کی عادت 10 سالہ شادی کے خاتمے کی وجہ بن گئی

شوہر کی مچھلی پکڑنے کی عادت نے دس سال کی شادی کو طلاق میں بدل دیا ہے۔ فوٹو: فائل

چینی خاتون نے اپنے شوہر سے عدالت کے ذریعے طلاق کی درخواست دی ہے کہ اس کے شوہر کو مچھلی پکڑنے کا جنون ہے اور وہ اہلِ خانہ کو وقت نہیں دیتا بس اپنا وقت دوستوں کے ساتھ ماہی گیری میں گزارتا ہے۔

چین کے صوبہ شینڈونگ کے جیوئے علاقے میں ’زینگ‘ نامی خاتون نے بتایا کہ اس کے شوہر کی مچھلی پکڑنے کی لت نے پورے گھر کو تباہ کر دیا ہے۔ نہ وہ دو بچوں پر توجہ دیتا ہے، نہ گھریلو امور میں دلچسپی لیتا ہے۔ یہ وجہ ہے کہ وہ دس برس تک خوش و خرم رہنے کے بعد اب اس سے علیحدگی چاہتی ہے۔

بیوی کے مطابق شوہر ہر شام کو گھر سے نکل جاتا ہے اور گھنٹوں مچھلی پکڑنے میں گزارتا ہے۔ پھر گھر آکر بھی وہ اسمارٹ فون کو تکتا رہتا ہے۔ اس نے کہا کہ اب طلاق کے سوا کوئی اور راستہ باقی نہیں بچا ہے۔

’میں صبح 6 بجے اٹھتی ہوں، ناشتا بناتی ہوں، دو بچوں کو اسکول بھیج کر کام پر جاتی ہوں۔ روزانہ گھر کی صفائی، جھاڑو اور برتن کرتی ہوں۔ پھر بچوں کو اسکول سے واپس لاتی ہوں اور انہیں ہوم ورک کرواتی ہوں اور شوہر کوئی مدد نہیں کرتا اور اب میں بہت تھک چکی ہوں۔‘ خاتون نے عدالت میں بتایا۔

دوسری جانب شوہر صبح کام پر جانے کے بعد گھر آکر اسمارٹ فون دیکھتا رہتا ہے اور طعام کے بعد مچھلی پکڑنے نکل جاتا ہے اور رات دیر کو واپس لوٹتا ہے۔

دوسری جانب مسلسل بیوی کی شکایت کے بعد شوہر نے بھی طلاق دینے پر رضامندی ظاہر کردی ہے اور جلد ہی یہ طلاق واقع ہوجائے گی۔