سابق اولمپک چیمپئن ایتھلیٹ طیارے کے حادثے میں کرشماتی طور پر بچ گئے

ڈیوڈ روڈیشا / فائل فوٹو
ڈیوڈ روڈیشا / فائل فوٹو

کینیا سے تعلق رکھنے والے سابق اولمپک چیمپئن ڈیوڈ روڈیشا طیارے کے حادثے میں کرشماتی طور پر بال بال بچ گئے۔

800 میٹر ریس کےسابق ڈبل اولمپک چیمپئن اور ورلڈ ریکارڈ ہولڈر ڈیوڈ روڈیشا ایک چھوٹے طیارے سے مشرقی کینیا میں مسائی اولمپکس میں شرکت کے بعد دیگر 5 افراد کے ساتھ واپسی کا سفر کررہے تھے۔

ٹیک آف کے تھوڑی دیر بعد طیارہ زمین سے ٹکرا گیا۔

یہ واقعہ 10 دسمبر کو پیش آیا تھا اور 33 سالہ ڈیوڈ روڈیشا نے بتایا کہ ٹیک آف کے کچھ دیر بعد طیارے کے انجن میں مسائل سامنے آئے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ پرواز کے 7 یا 8 منٹ تک سب ٹھیک تھا، پھرجہاز کا انجن اچانک بند ہوگیا جس کے بعد پائلٹ نے محفوظ جگہ پر طیارے کو لینڈ کرنے کی کوشش کی۔

ان کا کہنا تھا کہ اس کوشش کے دوران طیارے کا ایک پر درخت سے ٹکرا گیا مگر پائلٹ نے بہت مہارت کےساتھ ناقابل یقین کام کیا۔

حادثے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا بس کچھ افراد زخمی ہوئے جبکہ ڈیوڈ روڈیشا کو کمر میں تکلیف کا سامنا ہوا۔

یہ پہلی بار نہیں جب ڈیوڈ روڈیشا کو حادثے کا سامنا ہوا ہو، اس سے قبل 2019 میں ٹائر پھٹنے کے بعد ان کی گاڑی بس سے ٹکرا گئی تھی، جس سے وہ معمولی زخمی ہوئے۔

ڈیوڈ روڈیشا نے 2012 اور 2016 کے اولمپکس کی 800 میٹر ریس میں طلائی تمغے اپنے نام کیے تھے مگر گزشتہ 5 برس سے وہ کسی بین الاقوامی مقابلے کا حصہ نہیں بنے۔