زمبابوے سے 23 کروڑ سال قدیم ڈائنوسار کی باقیات دریافت

(فوٹو: انٹرنیٹ)

نئی دریافت ہونے والی باقیات کے تجزیے میں انکشاف کیا گیا ہے کہ افریقی ملک زمبابوے میں 23 کروڑ سال قبل لمبی گرد،تیز دھار دانت اور لمبی دم والے ڈائنوسار موجود تھے۔

مبائریسارس راٹھی نام کا یہ ڈائنو سار افریقا میں دریافت ہونے والا اب تک کا سب سے قدیم ڈائنوسار ہے۔

ورجینیا ٹیک کالج آف سائنس کے ڈاکٹر کرسٹوفر گرِفن کا کہنا تھا کہ مبائریسارس راٹھی کی دریافت قدیم ترین ڈائنوسار کی باقیات کے ریکارڈ میں موجود اہم ارضیاتی خلاء کو پُر کرتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ڈائنو سار افریقا کے اب تک کے سب سے قدیم ڈائنوسارہیں، اور اندازاً ان کا دور وہی ہے جو دنیا میں کہیں اور پائے جانے والے قدیم ڈائنوسار کا ہے۔

1662007161 939 زمبابوے سے 23 کروڑ سال قدیم ڈائنوسار کی باقیات دریافت

انہوں نے بتایا کہ تقریباً 23 کروڑ سال قبل اخیرٹرائیسِک پیریڈ کی کارنیئن اسٹیج سے تعلق رکھنے والے قدیم ترین ڈائنوسار کی باقیات انتہائی نایاب ہیں اور دنیا کے چند مقامات سے برآمد ہوئی ہیں جن میں شمالی ارجنٹینا، جنوبی برازیل اور بھارت شامل ہیں۔

مبائریسارس راٹھی ڈائنوسار کا ڈھانچہ شمالی زمبابوے سے دریافت ہوا تھا۔ دریافت ہونے والی باقیات میں اس کے ہاتھوں اور کھوپڑی کے کچھ حصے موجود نہیں تھے۔

باقیات کے تجزیے سے علم ہوا کہ یہ ڈائنو سار دو ٹانگوں پر چلتا تھا، اس کا سر نسبتاً چھوٹا تھا اور اس کے دانت چھوٹے، تیز دھار اور تکون تھے۔